اندھیرا مٹتا نہیں ہے مٹانا پڑتا ہے

بھارت بھوشن پنت

اندھیرا مٹتا نہیں ہے مٹانا پڑتا ہے

بھارت بھوشن پنت

MORE BY بھارت بھوشن پنت

    اندھیرا مٹتا نہیں ہے مٹانا پڑتا ہے

    بجھے چراغ کو پھر سے جلانا پڑتا ہے

    یہ اور بات ہے گھبرا رہا ہے دل ورنہ

    غموں کا بوجھ تو سب کو اٹھانا پڑتا ہے

    کبھی کبھی تو ان اشکوں کی آبرو کے لیے

    نہ چاہتے ہوئے بھی مسکرانا پڑتا ہے

    اب اپنی بات کو کہنا بہت ہی مشکل ہے

    ہر ایک بات کو کتنا گھمانا پڑتا ہے

    وگرنہ گفتگو کرتی نہیں یہ خاموشی

    ہر اک صدا کو ہمیں چپ کرانا پڑتا ہے

    اب اپنے پاس تو ہم خود کو بھی نہیں ملتے

    ہمیں بھی خود سے بہت دور جانا پڑتا ہے

    اک ایسا وقت بھی آتا ہے زندگی میں کبھی

    جب اپنے سائے سے پیچھا چھڑانا پڑتا ہے

    بس ایک جھوٹ کبھی آئنے سے بولا تھا

    اب اپنے آپ سے چہرہ چھپانا پڑتا ہے

    ہمارے حال پہ اب چھوڑ دے ہمیں دنیا

    یہ بار بار ہمیں کیوں بتانا پڑتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY