اپنے آنسو ہیں تمہارے نہیں رو سکتا میں

خالد ملک ساحل

اپنے آنسو ہیں تمہارے نہیں رو سکتا میں

خالد ملک ساحل

MORE BYخالد ملک ساحل

    اپنے آنسو ہیں تمہارے نہیں رو سکتا میں

    آج آنکھوں سے ستارے نہیں رو سکتا میں

    ایک تکلیف کا دریا ہے بدن میں لیکن

    بیٹھ کر اس کے کنارے نہیں رو سکتا میں

    میں ہوں مجذوب مرے دل کی حقیقت ہے الگ

    لاکھ ہوتے ہوں خسارے نہیں رو سکتا میں

    جسم ہے روح کی حدت میں پگھلنے والا

    ہوں شرابور شرارے نہیں رو سکتا میں

    میں تماشا ہوں تماشائی ہیں چاروں جانب

    شرم ہے شرم کے مارے نہیں رو سکتا میں

    بدگماں ہونے لگا ہے یہ تیقن کا جہاں

    مجھ کو افسوس ہے پیارے نہیں رو سکتا میں

    ذرے ذرے میں قیامت کا سماں ہے ساحلؔ

    ایک ہی دل کے سہارے نہیں رو سکتا میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY