اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے

وسیم بریلوی

اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے

وسیم بریلوی

MORE BY وسیم بریلوی

    اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے

    تیری مرضی کے مطابق نظر آئیں کیسے

    گھر سجانے کا تصور تو بہت بعد کا ہے

    پہلے یہ طے ہو کہ اس گھر کو بچائیں کیسے

    لاکھ تلواریں بڑھی آتی ہوں گردن کی طرف

    سر جھکانا نہیں آتا تو جھکائیں کیسے

    قہقہہ آنکھ کا برتاؤ بدل دیتا ہے

    ہنسنے والے تجھے آنسو نظر آئیں کیسے

    پھول سے رنگ جدا ہونا کوئی کھیل نہیں

    اپنی مٹی کو کہیں چھوڑ کے جائیں کیسے

    کوئی اپنی ہی نظر سے تو ہمیں دیکھے گا

    ایک قطرے کو سمندر نظر آئیں کیسے

    جس نے دانستہ کیا ہو نظر انداز وسیمؔ

    اس کو کچھ یاد دلائیں تو دلائیں کیسے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    مآخذ:

    • Book: Mera Kiya (Pg. 32)
    • Author: Waseem Barelvi
    • مطبع: Maktaba Jamia Ltd. (2007)
    • اشاعت: 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites