اپنے خلا میں لا کہ یہ تم کو دکھا رہا ہوں میں

فیضان ہاشمی

اپنے خلا میں لا کہ یہ تم کو دکھا رہا ہوں میں

فیضان ہاشمی

MORE BYفیضان ہاشمی

    اپنے خلا میں لا کہ یہ تم کو دکھا رہا ہوں میں

    وہ جو خلا نورد ہیں ان کے لیے خلا ہوں میں

    عشق ہوا نہیں مجھے عشق کو ہو گیا ہوں میں

    اتنا نہیں بچا ہوا جتنا پڑا ہوا ہوں میں

    بن تو گیا ہوں کوزہ گر گھوم کے تیرے چاک پر

    جیسا بنا رہا تھا تو ویسا نہیں بنا ہوں میں

    مٹی یہاں کی ٹھیک ہے مٹی سے کچھ گلا نہیں

    آنکھیں ملا ملا کے بس پانی بدل رہا ہوں میں

    بھیس دیے کا دھار کر تیری دعا سنوار کر

    بیچ میں طاقچہ ہے اور دونوں طرف کھڑا ہوں میں

    روح ملی ہے یا نہیں اتنا میں جانتا نہیں

    تیرے سے ایک جسم کو پہلے بھی مل چکا ہوں میں

    بارہ بجے کے بعد اک دن کو نکالتے ہوئے

    دیکھا تو جا چکا ہوں پر پکڑا نہیں گیا ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY