اپنی آنکھوں میں حسیں خواب سجائے رکھو

فرحت شہزاد

اپنی آنکھوں میں حسیں خواب سجائے رکھو

فرحت شہزاد

MORE BYفرحت شہزاد

    اپنی آنکھوں میں حسیں خواب سجائے رکھو

    لاکھ طوفان اٹھیں شمع جلائے رکھو

    رات پھر رات ہے اک روز گزر جائے گی

    صبح کی آس عزائم میں بسائے رکھو

    خواہش دل کی ہوا تیز بہت ہے یارو

    آگ پندار کی سینے میں جلائے رکھو

    جیتنا چاہو تو ہر مات سہو ہنس ہنس کر

    فکر مایوس خیالوں سے بچائے رکھو

    یوں ذرا دیر کو دل سے ہی لبھا لیتے ہیں

    بات تو جب ہے کہ تا عمر لبھائے رکھو

    تم نے سچ بولا ہے مصلوب تمہیں ہونا ہے

    اپنے کاندھے پہ صلیب اپنی اٹھائے رکھو

    گر یہ چاہو کہ عیاں کرب نہ ہو سینے کا

    جان شہزادؔ نگاہوں سے بنائے رکھو

    مأخذ :
    • کتاب : aa.iinaa jhuuTaa Hai (Pg. 107)
    • Author : FARHAT SHAHZAD
    • مطبع : Al-Hamd Publications (2001)
    • اشاعت : 2001

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے