اپنی باتوں کو تولنا ہوگا

عارج میر

اپنی باتوں کو تولنا ہوگا

عارج میر

MORE BYعارج میر

    اپنی باتوں کو تولنا ہوگا

    یعنی سورج کو بولنا ہوگا

    دھوپ کمرے میں یوں نہ آئے گی

    اٹھ کے دروازہ کھولنا ہوگا

    حادثے ہیں شکست آمادہ

    موت کو سر پہ ڈولنا ہوگا

    نقش بکھرا دئے ہوا نے سب

    ایک اک ذرہ رولنا ہوگا

    آنکھ والے سے یہ تقاضا ہے

    ایک اندھا ہوں بولنا ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY