اپنی جنگ ہی لڑتی ہے

بلقیس خان

اپنی جنگ ہی لڑتی ہے

بلقیس خان

MORE BYبلقیس خان

    اپنی جنگ ہی لڑتی ہے

    لاکھ کہو وہ باغی ہے

    باپ کے زندہ رہنے تک

    ہر بیٹی شہزادی ہے

    راحت جس کو کہتے ہیں

    ماں کی گود میں ہوتی ہے

    اب سمجھیں گے دکھ میرا

    اب ان کی بھی بیٹی ہے

    تیز ہوا کی جانے بلا

    پیڑ پہ جو بھی گزرتی ہے

    تم ہو فلک کب سمجھو گے

    دھرتی کیا کچھ سہتی ہے

    غم کی موجوں میں دل کی

    ناؤ بہتی جاتی ہے

    ایک ہی شخص کو چاہو سدا

    یہ کیسی مجبوری ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY