اشعار میں مفہوم فسانے میں کہانی

عبدالسلام عاصم

اشعار میں مفہوم فسانے میں کہانی

عبدالسلام عاصم

MORE BYعبدالسلام عاصم

    اشعار میں مفہوم فسانے میں کہانی

    مت ڈھونڈ کہ الجھاتے ہیں الفاظ و معانی

    صد شکر وہ تعبیر سے مشروط نہیں تھیں

    بچپن میں سنا کرتے تھے جو خواب کہانی

    وہ زندگی جو پانے اور کھونے سے سوا ہو

    زیب اس کو نہیں دیتی کبھی مرثیہ خوانی

    فطرت کے تقاضے پہ نہ کر راہ عمل بند

    اقبال کی یہ بات کسی نے بھی نہ مانی

    تکمیل جنوں اب بھی ہے اس مصرع سے مشروط

    اے چاند مبارک ہو تجھے رات سہانی

    خوش حالیاں دہلی کی بجا آج بھی لیکن

    یاد آتی ہے کلکتے کی وہ شوخ جوانی

    پردیس میں بس ذہن سے آباد ہے عاصمؔ

    دل سے نہیں کر پایا کبھی نقل مکانی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY