اصل حالت کا بیاں ظاہر کے سانچوں میں نہیں

آفتاب حسین

اصل حالت کا بیاں ظاہر کے سانچوں میں نہیں

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    اصل حالت کا بیاں ظاہر کے سانچوں میں نہیں

    بات جو دل میں ہے میرے میرے لفظوں میں نہیں

    اک زمانہ تھا کہ اک دنیا مرے ہم راہ تھی

    اور اب دیکھوں تو رستہ بھی نگاہوں میں نہیں

    کوئی آسیب بلا ہے شہر پر چھایا ہوا

    بوئے آدم زاد تک خالی مکانوں میں نہیں

    رفتہ رفتہ سب ہماری راہ پر آتے گئے

    بات ہے جو ہم بروں میں اچھے اچھوں میں نہیں

    اپنے ہی دم سے چراغاں ہے وگرنہ آفتابؔ

    اک ستارہ بھی مری ویران شاموں میں نہیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اصل حالت کا بیاں ظاہر کے سانچوں میں نہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY