اور عشرت کی تمنا کیا کریں

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

اور عشرت کی تمنا کیا کریں

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

MORE BYوحشتؔ رضا علی کلکتوی

    اور عشرت کی تمنا کیا کریں

    سامنے تو ہو تجھے دیکھا کریں

    محو ہو جائیں تصور میں ترے

    ہم بھی اپنے قطرے کو دریا کریں

    ہم کو ہے ہر روز ہر وقت انتظار

    بندہ پرور گاہ گاہ آیا کریں

    چارہ گر کا چاہیئے کرنا علاج

    اس کو بھی اپنا سا دیوانہ کریں

    ان کے آنے کا بھروسا ہو نہ ہو

    راہ ہم ان کی مگر دیکھا کریں

    ہم نہیں ناواقف رسم ادب

    دل کی بیتابی کو وحشتؔ کیا کریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY