بعد مرنے کے بھی دنیا میں ہو چرچا میرا

دنیش کمار

بعد مرنے کے بھی دنیا میں ہو چرچا میرا

دنیش کمار

MORE BYدنیش کمار

    بعد مرنے کے بھی دنیا میں ہو چرچا میرا

    ایسی شہرت کی بلندی ہو ٹھکانہ میرا

    میں ہوں اک پریم پجاری اے مری جان حیات

    تو ہے مندر تو کلیسا تو ہی کعبہ میرا

    میرے بیٹے کی نگاہوں میں ہیں کچھ خواب مرے

    زندگی اس کی ہے جینے کا سہارا میرا

    موت بھی چین سے آتی ہے کہاں انساں کو

    ذہن میں گونجتا ہی رہتا ہے میرا میرا

    اب بھی راتوں کو مری نیند اچٹ جاتی ہے

    آہ اک چاند کو چھونے کا وہ سپنا میرا

    ان کہی بات مری کیا وہ سمجھ پائیں گے

    کیا مکمل کبھی ہو پائے گا قصہ میرا

    سلوٹیں وقت کی پڑنے ہی لگیں اس پہ دنیشؔ

    تم نے دیکھا ہی کہاں غور سے چہرہ میرا

    مآخذ :
    • کتاب : Word File Mail By Salim Saleem

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY