بات بڑھتی گئی آگے مری نادانی سے

غلام مرتضی راہی

بات بڑھتی گئی آگے مری نادانی سے

غلام مرتضی راہی

MORE BY غلام مرتضی راہی

    بات بڑھتی گئی آگے مری نادانی سے

    کتنا ارزاں ہوا میں اپنی فراوانی سے

    خاک ہی خاک نظر آئی مجھے چاروں طرف

    جل گئے چاند ستارے مری تابانی سے

    بے تحاشہ جیے ہم لوگ ہمیں ہوش نہیں

    وقت آرام سے گزرا کہ پریشانی سے

    اب مرے گرد ٹھہرتی نہیں دیوار کوئی

    بندشیں ہار گئیں بے سر و سامانی سے

    آئے گا ایسا بھی اک موڑ سفر میں راہیؔ

    گرد بھی میری نہ پاؤ گے تم آسانی سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY