باطل ہے ہم سے دعویٰ شاعر کو ہم سری کا

محمد رفیع سودا

باطل ہے ہم سے دعویٰ شاعر کو ہم سری کا

محمد رفیع سودا

MORE BYمحمد رفیع سودا

    باطل ہے ہم سے دعویٰ شاعر کو ہم سری کا

    دیوان ہے ہمارا کیسہ جواہری کا

    چہرہ ترا سا کب ہے سلطان خاوری کا

    چیرہ ہزار باندھے سر پر جو وہ زری کا

    منہ پر یہ گوشوارہ موتی کا جلوہ گر ہے

    جیسے قران باہم ہو ماہ و مشتری کا

    آئینہ خانے میں وہ جس وقت آن بیٹھے

    پھر جس طرف کو دیکھو جلوہ ہے واں پری کا

    جز شوق دل نہ پہنچوں ہرگز بہ کوئے جاناں

    اے خضر کب ہوں تیری محتاج رہبری کا

    جو دیکھتا ہے تجھ کو ہنستا ہے قہقہے مار

    اے شیخ تیرا چہرہ مبدا ہے مسخری کا

    طالب ہیں سیم و زر کے خوبان ہند سوداؔ

    احوال کون سمجھے عاشق کی بے زری کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY