بچپن تھا وہ ہمارا یا جھونکا بہار کا

دنیش کمار

بچپن تھا وہ ہمارا یا جھونکا بہار کا

دنیش کمار

MORE BYدنیش کمار

    بچپن تھا وہ ہمارا یا جھونکا بہار کا

    لوٹ آئے کاش پھر وہ زمانہ بہار کا

    کھڑکی میں اک گلاب مہکتا تھا سامنے

    برسوں سے بند ہے وہ دریچہ بہار کا

    کلیوں کا حسن گل کی مہک تتلیوں کا رقص

    ہے یاد مجھ کو آج بھی چہرہ بہار کا

    عرصہ گزر گیا پہ لگے کل کی بات ہو

    اس باغ حسن میں مرا درجہ بہار کا

    دور خزاں میں دل کے بہلنے کا ہے سبب

    آنکھوں میں میری قید نظارہ بہار کا

    کلیاں کو باغباں ہی مسلتا ہے جب کبھی

    روتا ہے زار زار کلیجہ بہار کا

    مرضی پہ گلستاں کی بھلا کب ہے منحصر

    آنا بہار کا یا نہ آنا بہار کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY