بدن بھیگیں گے برساتیں رہیں گی

آشفتہ چنگیزی

بدن بھیگیں گے برساتیں رہیں گی

آشفتہ چنگیزی

MORE BY آشفتہ چنگیزی

    بدن بھیگیں گے برساتیں رہیں گی

    ابھی کچھ دن یہ سوغاتیں رہیں گی

    تڑپ باقی رہے گی جھوٹ ہے یہ

    ملیں گے ہم ملاقاتیں رہیں گی

    نظر میں چہرہ کوئی اور ہوگا

    گلے میں جھولتی بانہیں رہیں گی

    سفر میں بیت جانا ہے دنوں کو

    مسلسل جاگتی راتیں رہیں گی

    زبانیں نطق سے محروم ہوں گی

    صحیفوں میں مناجاتیں رہیں گی

    مناظر دھند میں چھپ جائیں گے سب

    خلا میں گھورتی آنکھیں رہیں گی

    کہاں تک ساتھ دیں گے شہر والے

    کہاں تک قید آوازیں رہیں گی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY