بغیر اس کے اب آرام بھی نہیں آتا

غلام محمد قاصر

بغیر اس کے اب آرام بھی نہیں آتا

غلام محمد قاصر

MORE BY غلام محمد قاصر

    بغیر اس کے اب آرام بھی نہیں آتا

    وہ شخص جس کا مجھے نام بھی نہیں آتا

    اسی کی شکل مجھے چاند میں نظر آئے

    وہ ماہ رخ جو لب بام بھی نہیں آتا

    کروں گا کیا جو محبت میں ہو گیا ناکام

    مجھے تو اور کوئی کام بھی نہیں آتا

    بٹھا دیا مجھے دریا کے اس کنارے پر

    جدھر حباب تہی جام بھی نہیں آتا

    چرا کے خواب وہ آنکھوں کو رہن رکھتا ہے

    اور اس کے سر کوئی الزام بھی نہیں آتا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    غلام محمد قاصر

    غلام محمد قاصر

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY