بہاروں کا سماں ہے اور میں ہوں

عظمت عبدالقیوم خاں

بہاروں کا سماں ہے اور میں ہوں

عظمت عبدالقیوم خاں

MORE BYعظمت عبدالقیوم خاں

    بہاروں کا سماں ہے اور میں ہوں

    کسی کا داستاں ہے اور میں ہوں

    کہیں جس کا کنارا ہی نہیں ہے

    وہ بحر بیکراں ہے اور میں ہوں

    وہ ہیں اور ایک انداز پشیماں

    وفا کا امتحاں ہے اور میں ہوں

    عطائے درد الفت کی بدولت

    نشاط جاوداں ہے اور میں ہوں

    ہوئی ہے پرسش حال محبت

    نگاہ ترجماں ہے اور میں ہوں

    تمناؤں کی جلتی رہ گزر میں

    خیال کارواں ہے اور میں ہوں

    وہی بیتاب ارمانوں کی دنیا

    وہی غم کا دھواں ہے اور میں ہوں

    جہاں میں اب بہ نام شعر عظمتؔ

    مرا اپنا جہاں ہے اور میں ہوں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY