بحر میں سوچتی تھی میں تم کو

شاہدہ مجید

بحر میں سوچتی تھی میں تم کو

شاہدہ مجید

MORE BY شاہدہ مجید

    بحر میں سوچتی تھی میں تم کو

    شعر میں ڈھالتی تھی میں تم کو

    سارے جگ میں تلاشنا تو الگ

    تم میں بھی کھوجتی تھی میں تم کو

    مختلف تم نہیں تھے دنیا سے

    مختلف سوچتی تھی میں تم کو

    کھو کے مجھ کو یہ سوچتے ہو نا

    کس قدر چاہتی تھی میں تم کو

    مجھ کو ہر غم نوازنے والے

    ہر خوشی سونپتی تھی میں تم کو

    تم اچانک بدل گئے تو کھلا

    کتنا کم جانتی تھی میں تم کو

    سانپ پر پاؤں آ گیا میرا

    خواب میں دیکھتی تھی میں تم کو

    آخرش تم نے مار ڈالا مجھے

    زندگی مانتی تھی میں تم کو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY