بہت گھٹن ہے کوئی صورت بیاں نکلے

ساحر لدھیانوی

بہت گھٹن ہے کوئی صورت بیاں نکلے

ساحر لدھیانوی

MORE BY ساحر لدھیانوی

    بہت گھٹن ہے کوئی صورت بیاں نکلے

    اگر صدا نہ اٹھے کم سے کم فغاں نکلے

    فقیر شہر کے تن پر لباس باقی ہے

    امیر شہر کے ارماں ابھی کہاں نکلے

    حقیقتیں ہیں سلامت تو خواب بہتیرے

    ملال کیوں ہو کہ کچھ خواب رائیگاں نکلے

    ادھر بھی خاک اڑی ہے ادھر بھی خاک اڑی

    جہاں جہاں سے بہاروں کے کارواں نکلے

    ستم کے دور میں ہم اہل دل ہی کام آئے

    زباں پہ ناز تھا جن کو وہ بے زباں نکلے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ساحر لدھیانوی

    ساحر لدھیانوی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY