بہت مشکل ہے دریا پار جانا

خالد یوسف

بہت مشکل ہے دریا پار جانا

خالد یوسف

MORE BYخالد یوسف

    بہت مشکل ہے دریا پار جانا

    مگر ہے کفر ہمت ہار جانا

    بہت ممکن ہے قسمت منتظر ہو

    تو پھر خوابوں میں بھی بیدار جانا

    نہ جانا حلقۂ ظلمت میں چاہے

    پڑے مقتل پس دیوار جانا

    یہ کہہ کر وہ چلا سوئے شہادت

    خدا کے پاس کیا بیمار جانا

    امیر شہر کا حسن تدبر

    رقیبوں کو بھی اپنا یار جانا

    مقدر تھا جو بچ آئے سلامت

    دل انکار کو اقرار جانا

    تمنا جیت کی ہو زندگی میں

    تو ہر محفل میں لے کر ہار جانا

    اگر منصف بنا وہ خود نہ ہوگا

    یہ راز اس نے سر دربار جانا

    یہ پیہم مفلسی جن کا کرم ہے

    انہیں کو ہم نے پالنہار جانا

    لب و رخسار پر تالے پڑے ہیں

    تو کیا خالدؔ پئے دیدار جانا

    مآخذ:

    • کتاب : Jugnu Tare (Pg. 59)
    • Author : Khalid Yusuf
    • مطبع : Kifayat Acadami,karachi (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY