بہت تذکرہ داستانوں میں تھا

ابرار اعظمی

بہت تذکرہ داستانوں میں تھا

ابرار اعظمی

MORE BY ابرار اعظمی

    بہت تذکرہ داستانوں میں تھا

    تو کیا وہ کہیں آسمانوں میں تھا

    مجھے دیکھ کر کل وہ ہنستا رہا

    تو وہ بھی مرے راز دانوں میں تھا

    وہ ہر شب چباتا رہا اژدہے

    سنا ہے کہ وہ نوجوانوں میں تھا

    عجب چیز ہے لمس کی تازگی

    نشہ ہی نشہ دو جہانوں میں تھا

    اسے زندگی مختصر ہی ملی

    مگر خندۂ گل یگانوں میں تھا

    وجود اس کا دھرتی سے چمٹا رہا

    دھیان اس کا اونچی اڑانوں میں تھا

    پرندے فضاؤں میں پھر کھو گئے

    دھواں ہی دھواں آشیانوں میں تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY