بیٹھا نہیں ہوں سایۂ دیوار دیکھ کر

بسمل سعیدی

بیٹھا نہیں ہوں سایۂ دیوار دیکھ کر

بسمل سعیدی

MORE BYبسمل سعیدی

    بیٹھا نہیں ہوں سایۂ دیوار دیکھ کر

    ٹھہرا ہوا ہوں وقت کی رفتار دیکھ کر

    ہم مشربی کی شرم گوارا نہ ہو سکی

    خود چھوڑ دی ہے شیخ کو مے خوار دیکھ کر

    کیا جانے بحر عشق میں کتنے ہوئے ہیں غرق

    ساحل سے سطح آب کو ہموار دیکھ کر

    ہیں آج تک نگاہ میں حالانکہ آج تک

    دیکھا نہ پھر کبھی انہیں اک بار دیکھ کر

    بسملؔ تم آج روتے ہو انجام عشق کو

    ہم کل سمجھ گئے تھے کچھ آثار دیکھ کر

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    بیٹھا نہیں ہوں سایۂ دیوار دیکھ کر نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY