بن میں ویراں تھی نظر شہر میں دل روتا ہے

غلام محمد قاصر

بن میں ویراں تھی نظر شہر میں دل روتا ہے

غلام محمد قاصر

MORE BYغلام محمد قاصر

    بن میں ویراں تھی نظر شہر میں دل روتا ہے

    زندگی سے یہ مرا دوسرا سمجھوتا ہے

    لہلہاتے ہوئے خوابوں سے مری آنکھوں تک

    رت جگے کاشت نہ کر لے تو وہ کب سوتا ہے

    جس کو اس فصل میں ہونا ہے برابر کا شریک

    میرے احساس میں تنہائیاں کیوں بوتا ہے

    نام لکھ لکھ کے ترا پھول بنانے والا

    آج پھر شبنمیں آنکھوں سے ورق دھوتا ہے

    تیرے بخشے ہوئے اک غم کا کرشمہ ہے کہ اب

    جو بھی غم ہو مرے معیار سے کم ہوتا ہے

    سو گئے شہر محبت کے سبھی داغ و چراغ

    ایک سایہ پس دیوار ابھی روتا ہے

    یہ بھی اک رنگ ہے شاید مری محرومی کا

    کوئی ہنس دے تو محبت کا گماں ہوتا ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    غلام محمد قاصر

    غلام محمد قاصر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY