بس ایک بات کی اس کو خبر ضروری ہے

آفتاب حسین

بس ایک بات کی اس کو خبر ضروری ہے

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    بس ایک بات کی اس کو خبر ضروری ہے

    کہ وہ ہمارے لیے کس قدر ضروری ہے

    دلوں میں درد کی دولت بچا بچا کے رکھو

    یہ وہ متاع ہے جو عمر بھر ضروری ہے

    نہیں ضرور کہ مقدور ہو تو ساتھ رکھیں

    کبھی کبھار مگر نوحہ گر ضروری ہے

    کبھی تو کھیل پرندے بھی ہار جاتے ہیں

    ہوا کہیں کی بھی ہو مستقر ضروری ہے

    یہ کیا ضرور کہ مست اپنے آپ ہی میں رہیں

    ادھر ادھر کی بھی کچھ کچھ خبر ضروری ہے

    مفر نہیں غم دنیا سے آفتاب حسینؔ

    بہت کٹھن ہے یہ منزل مگر ضروری ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY