بس وہی لمحہ آنکھ دیکھے گی (ردیف .. ا)

شائستہ یوسف

بس وہی لمحہ آنکھ دیکھے گی (ردیف .. ا)

شائستہ یوسف

MORE BYشائستہ یوسف

    بس وہی لمحہ آنکھ دیکھے گی

    جس پہ لکھا ہوا ہو نام اپنا

    ایسا صدیوں سے ہوتا آیا ہے

    لوگ کرتے رہیں گے کام اپنا

    کچھ ہوائیں گزر رہی تھیں ادھر

    ہم نے پہنچا دیا پیام اپنا

    ذہن کر لے ہزارہا کوشش

    دل بھی کرتا رہے گا کام اپنا

    چاہتی ہوں فلک کو چھو لینا

    جانتی ہوں مگر مقام اپنا

    کیا یہی ہے شناخت شائستہؔ

    ماں نے جو رکھ دیا تھا نام اپنا

    RECITATIONS

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    بس وہی لمحہ آنکھ دیکھے گی (ردیف .. ا) شائستہ یوسف

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY