بستی میں کچھ لوگ نرالے اب بھی ہیں

زہرا نگاہ

بستی میں کچھ لوگ نرالے اب بھی ہیں

زہرا نگاہ

MORE BYزہرا نگاہ

    بستی میں کچھ لوگ نرالے اب بھی ہیں

    دیکھو خالی دامن والے اب بھی ہیں

    دیکھو وہ بھی ہیں جو سب کہہ سکتے تھے

    دیکھو ان کے منہ پر تالے اب بھی ہیں

    دیکھو ان آنکھوں کو جنہوں نے سب دیکھا

    دیکھو ان پر خوف کے جالے اب بھی ہیں

    دیکھو اب بھی جنس وفا نایاب نہیں

    اپنی جان پہ کھیلنے والے اب بھی ہیں

    تارے ماند ہوئے پر ذرے روشن ہیں

    مٹی میں آباد اجالے اب بھی ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    زہرا نگاہ

    زہرا نگاہ

    RECITATIONS

    عذرا نقوی

    عذرا نقوی

    عذرا نقوی

    بستی میں کچھ لوگ نرالے اب بھی ہیں عذرا نقوی

    مأخذ :
    • کتاب : Waraq (Pg. 152)
    • Author : ZEHRA NIGAAH

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY