بے خیالی میں یوں ہی بس اک ارادہ کر لیا

منیر نیازی

بے خیالی میں یوں ہی بس اک ارادہ کر لیا

منیر نیازی

MORE BYمنیر نیازی

    بے خیالی میں یوں ہی بس اک ارادہ کر لیا

    اپنے دل کے شوق کو حد سے زیادہ کر لیا

    جانتے تھے دونوں ہم اس کو نبھا سکتے نہیں

    اس نے وعدہ کر لیا میں نے بھی وعدہ کر لیا

    غیر سے نفرت جو پا لی خرچ خود پر ہو گئی

    جتنے ہم تھے ہم نے خود کو اس سے آدھا کر لیا

    شام کے رنگوں میں رکھ کر صاف پانی کا گلاس

    آب سادہ کو حریف رنگ بادہ کر لیا

    ہجرتوں کا خوف تھا یا پر کشش کہنہ مقام

    کیا تھا جس کو ہم نے خود دیوار جادہ کر لیا

    ایک ایسا شخص بنتا جا رہا ہوں میں منیرؔ

    جس نے خود پر بند حسن و جام و بادہ کر لیا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    منیر نیازی

    منیر نیازی

    منیر نیازی

    منیر نیازی

    مأخذ :
    • کتاب : chhe rangi darwaze (Pg. 53)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے