بے نیازانہ ہر اک راہ سے گزرا بھی کرو

اطہر نفیس

بے نیازانہ ہر اک راہ سے گزرا بھی کرو

اطہر نفیس

MORE BYاطہر نفیس

    بے نیازانہ ہر اک راہ سے گزرا بھی کرو

    شوق نظارہ جو ٹھہرائے تو ٹھہرا بھی کرو

    اتنے شائستۂ آداب محبت نہ بنو

    شکوہ آتا ہے اگر دل میں تو شکوہ بھی کرو

    سینۂ عشق تمناؤں کا مدفن تو نہیں

    شوق دیدار اگر ہے تقاضا بھی کرو

    وہ نظر آج بھی کم معنی و بیگانہ نہیں

    اس کو سمجھا بھی کرو اس پہ بھروسا بھی کرو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اطہر نفیس

    اطہر نفیس

    اطہر نفیس

    اطہر نفیس

    RECITATIONS

    اطہر نفیس

    اطہر نفیس

    اطہر نفیس

    بے نیازانہ ہر اک راہ سے گزرا بھی کرو اطہر نفیس

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY