بے وقت جو گھر سے وہ مسیحا نکل آیا

منیرؔ  شکوہ آبادی

بے وقت جو گھر سے وہ مسیحا نکل آیا

منیرؔ  شکوہ آبادی

MORE BYمنیرؔ  شکوہ آبادی

    بے وقت جو گھر سے وہ مسیحا نکل آیا

    گھبرا کے مرے منہ سے کلیجہ نکل آیا

    مدفون ہوا زیر زمیں کیا کوئی وحشی

    کیوں خاک سے گھبرا کے بگولا نکل آیا

    آئینہ میں منہ دیکھ کے مغرور ہوئے آپ

    دو شکلوں سے کیسا یہ نتیجہ نکل آیا

    زخمی جو کیا تم نے کھلے عشق کے اسرار

    جو کچھ کہ مرے دل میں نہاں تھا نکل آیا

    ٹھکرانے لگے دل کو تو برپا ہوئے طوفاں

    قطرہ جو ہٹانے لگے دریا نکل آیا

    اب رک نہیں سکتی ہے منیرؔ آہ جگر سوز

    دم گھٹنے لگا منہ سے کلیجہ نکل آیا

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab-e-Kalam Muneer Shikohabadi (Pg. 44)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY