کون و مکاں میں یارو آباد ہیں تو ہم ہیں

شاہ آثم

کون و مکاں میں یارو آباد ہیں تو ہم ہیں

شاہ آثم

MORE BY شاہ آثم

    کون و مکاں میں یارو آباد ہیں تو ہم ہیں

    اس ارض اور سما کی بنیاد ہیں تو ہم ہیں

    وحدت سے تا بہ کثرت سب سے ظہور اپنا

    گر ایک ہیں تو ہم ہیں ہفتاد ہیں تو ہم ہیں

    سب مرز بوم عالم ہے جلوہ گاہ اپنی

    ویران ہیں تو ہم ہیں آباد ہیں تو ہم ہیں

    اقلیم خیر و شر میں ہے حکم اپنا جاری

    گر داد ہیں تو ہم ہیں بیداد ہیں تو ہم ہیں

    اس گلشن جہاں میں سب ہے بہار اپنی

    گر قمری ہیں تو ہم ہیں شمشاد ہیں تو ہم ہیں

    ہیں جوہر اپنے یارو ہر رنگ میں نمایاں

    گر تیغ ہیں تو ہم ہیں جلاد ہیں تو ہم ہیں

    ہے دست گاہ اپنی سب شے میں کار فرما

    گر فصد ہیں تو ہم ہیں فصاد ہیں تو ہم ہیں

    یہ دارگیر عالم سب اپنی حالتیں ہیں

    گر دام ہیں تو ہم ہیں صیاد ہیں تو ہم ہیں

    یہ راز ہم نے آثمؔ خادم صفی سے پایا

    گر رشد ہیں تو ہم ہیں ارشاد ہیں تو ہم ہیں

    مآخذ:

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY