بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

تنویر سپرا

بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

تنویر سپرا

MORE BY تنویر سپرا

    بیٹے کو سزا دے کے عجب حال ہوا ہے

    دل پہروں مرا کرب کے دوزخ میں جلا ہے

    عورت کو سمجھتا تھا جو مردوں کا کھلونا

    اس شخص کو داماد بھی ویسا ہی ملا ہے

    ہر اہل ہوس جیب میں بھر لایا ہے پتھر

    ہمسائے کی بیری پہ ابھی بور پڑا ہے

    اب تک مرے اعصاب پہ محنت ہے مسلط

    اب تک مرے کانوں میں مشینوں کی صدا ہے

    اے رات مجھے ماں کی طرح گود میں لے لے

    دن بھر کی مشقت سے بدن ٹوٹ رہا ہے

    شاید میں غلط دور میں اترا ہوں زمیں پر

    ہر شخص تحیر سے مجھے دیکھ رہا ہے

    مآخذ:

    • Book : intekhab-e-zarrin (Pg. 343)
    • Author : Khvaja Mohammad Zakariya
    • مطبع : Sangeet publication (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY