بچھڑ کے مجھ سے یہ مشغلہ اختیار کرنا

محسن نقوی

بچھڑ کے مجھ سے یہ مشغلہ اختیار کرنا

محسن نقوی

MORE BYمحسن نقوی

    بچھڑ کے مجھ سے یہ مشغلہ اختیار کرنا

    ہوا سے ڈرنا بجھے چراغوں سے پیار کرنا

    کھلی زمینوں میں جب بھی سرسوں کے پھول مہکیں

    تم ایسی رت میں سدا مرا انتظار کرنا

    جو لوگ چاہیں تو پھر تمہیں یاد بھی نہ آئیں

    کبھی کبھی تم مجھے بھی ان میں شمار کرنا

    کسی کو الزام بے وفائی کبھی نہ دینا

    مری طرح اپنے آپ کو سوگوار کرنا

    تمام وعدے کہاں تلک یاد رکھ سکو گے

    جو بھول جائیں وہ عہد بھی استوار کرنا

    یہ کس کی آنکھوں نے بادلوں کو سکھا دیا ہے

    کہ سینۂ سنگ سے رواں آبشار کرنا

    میں زندگی سے نہ کھل سکا اس لیے بھی محسنؔ

    کہ بہتے پانی پہ کب تلک اعتبار کرنا

    مآخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-mohsin (Pg. 735)
    • Author : Mohsin Naqvi
    • مطبع : Mavra Publishers (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY