بکھر ہی جاؤں گا میں بھی ہوا اداسی ہے

افتخار امام صدیقی

بکھر ہی جاؤں گا میں بھی ہوا اداسی ہے

افتخار امام صدیقی

MORE BY افتخار امام صدیقی

    بکھر ہی جاؤں گا میں بھی ہوا اداسی ہے

    فنا نصیب ہر اک سلسلہ اداسی ہے

    بچھڑ نہ جائے کہیں تو سفر اندھیروں میں

    ترے بغیر ہر اک راستا اداسی ہے

    بتا رہا ہے جو رستہ زمیں دشاؤں کو

    ہمارے گھر کا وہ روشن دیا اداسی ہے

    اداس لمحوں نے کچھ اور کر دیا ہے اداس

    ترے بغیر تو ساری فضا اداسی ہے

    کہیں ضرور خدا کو مری ضرورت ہے

    جو آ رہی ہے فلک سے صدا اداسی ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Aiwan (Pg. 21)
    • Author : Manazir Ashiq Harganvi & Shahid Nayeem
    • مطبع : Nirali Duniya (1998)
    • اشاعت : 1998

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY