بجھتی مشعل کی التجا جیسے

نبیل احمد نبیل

بجھتی مشعل کی التجا جیسے

نبیل احمد نبیل

MORE BYنبیل احمد نبیل

    بجھتی مشعل کی التجا جیسے

    لوگ ہم کو ملے ہوا جیسے

    کوئی انساں نظر نہیں آتا

    ہر بشر ہو گیا خدا جیسے

    ہاتھ کشکول کی طرح پائے

    لب ملے ہم کو التجا جیسے

    کر دیا ہے خدائے واحد نے

    بند ہم پر در دعا جیسے

    گرد آلود ایسے سوچیں ہیں

    کوئی احساس ہو خفا جیسے

    اکثر اوقات ایسے کام کیے

    ہم نے ماؤں کی بد دعا جیسے

    ایسے لگتا ہے ان سے اپنا نبیلؔ

    ٹوٹ جائے گا رابطہ جیسے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY