بلبل نے جسے جا کے گلستان میں دیکھا

محمد رفیع سودا

بلبل نے جسے جا کے گلستان میں دیکھا

محمد رفیع سودا

MORE BYمحمد رفیع سودا

    بلبل نے جسے جا کے گلستان میں دیکھا

    ہم نے اسے ہر خار بیابان میں دیکھا

    روشن ہے وہ ہر ایک ستارے میں زلیخا

    جس نور کو تو نے سر کنعان میں دیکھا

    برہم کرے جمعیت کونین جو پل میں

    لٹکا وہ تری زلف پریشان میں دیکھا

    واعظ تو سنے بولے ہے جس روز کی باتیں

    اس روز کو ہم نے شب ہجران میں دیکھا

    اے زخم جگر سودۂ الماس سے خو کر

    کتنا وہ مزا تھا جو نمک دان میں دیکھا

    سوداؔ جو ترا حال ہے اتنا تو نہیں وہ

    کیا جانیے تو نے اسے کس آن میں دیکھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY