برا مت مان اتنا حوصلہ اچھا نہیں لگتا

آشفتہ چنگیزی

برا مت مان اتنا حوصلہ اچھا نہیں لگتا

آشفتہ چنگیزی

MORE BY آشفتہ چنگیزی

    برا مت مان اتنا حوصلہ اچھا نہیں لگتا

    یہ اٹھتے بیٹھتے ذکر وفا اچھا نہیں لگتا

    جہاں لے جانا ہے لے جائے آ کر ایک پھیرے میں

    کہ ہر دم کا تقاضائے ہوا اچھا نہیں لگتا

    سمجھ میں کچھ نہیں آتا سمندر جب بلاتا ہے

    کسی ساحل کا کوئی مشورہ اچھا نہیں لگتا

    جو ہونا ہے سو دونوں جانتے ہیں پھر شکایت کیا

    یہ بے مصرف خطوں کا سلسلہ اچھا نہیں لگتا

    اب ایسے ہونے کو باتیں تو ایسی روز ہوتی ہیں

    کوئی جو دوسرا بولے ذرا اچھا نہیں لگتا

    ہمیشہ ہنس نہیں سکتے یہ تو ہم بھی سمجھتے ہیں

    ہر اک محفل میں منہ لٹکا ہوا اچھا نہیں لگتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY