بوئے پیراہن صدا آئے

شاہد ماہلی

بوئے پیراہن صدا آئے

شاہد ماہلی

MORE BYشاہد ماہلی

    بوئے پیراہن صدا آئے

    کھڑکیاں کھول دو ہوا آئے

    منزلیں اپنے نام ہوں منسوب

    اپنی جانب بھی راستہ آئے

    جلتے بجھتے چراغ سا دل میں

    آرزوؤں کا سلسلہ آئے

    خامشی لفظ لفظ پھیلی تھی

    بے زبانی میں کچھ سنا آئے

    ڈوب کر ان اداس آنکھوں میں

    اک جہان طرب لٹا آئے

    دل میں رہ رہ کے اک خلش اٹھے

    بے سبب اک خیال سا آئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY