چاند نے آج جب اک نام لیا آخر شب

حمایت علی شاعر

چاند نے آج جب اک نام لیا آخر شب

حمایت علی شاعر

MORE BYحمایت علی شاعر

    چاند نے آج جب اک نام لیا آخر شب

    دل نے خوابوں سے بہت کام لیا آخر شب

    ہائے وہ خواب کہ تعبیر سے سرشار بھی تھا

    اس کی آنکھوں سے جو انعام لیا آخر شب

    ہائے کیا پیاس تھی جب اس کے لبوں سے میں نے

    مسکراتا ہوا اک جام لیا آخر شب

    میں جو گرتا بھی تو قدموں میں اسی کے گرتا

    اس نے خود بڑھ کے مجھے تھام لیا آخر شب

    زندگی بھر کی مسافت کا مداوا کہیے

    اس کی باہوں میں جو آرام لیا آخر شب

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے