چاند تاروں نے کوئی شے تو چھپائی ہوئی ہے

رشمی صبا

چاند تاروں نے کوئی شے تو چھپائی ہوئی ہے

رشمی صبا

MORE BY رشمی صبا

    چاند تاروں نے کوئی شے تو چھپائی ہوئی ہے

    ورنہ کیوں رات پریشانی میں آئی ہوئی ہے

    اس میں تبدیلی مری آنکھوں کو منظور نہیں

    وہ جو تصویر مرے دل نے بنائی ہوئی ہے

    مرنے دیتی ہے نہ جینے کی اجازت ہے مجھے

    ایک شے ایسی میری جاں میں سمائی ہوئی ہے

    ہم بناتے ہیں کوئی راہ گزر روز نئی

    روز دیوار زمانے نے اٹھائی ہوئی ہے

    کوئی شکوہ ہی نہیں اور کسی سے مجھ کو

    یہ مری جاں تو صباؔ خود کی ستائی ہوئی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY