چارہ سازی کا طلب گار لگے ہے وہ بھی

آر پی شوخ

چارہ سازی کا طلب گار لگے ہے وہ بھی

آر پی شوخ

MORE BYآر پی شوخ

    چارہ سازی کا طلب گار لگے ہے وہ بھی

    اک مسیحا ہے سو بیمار لگے ہے وہ بھی

    جس کی خاطر لی زمانے کی عداوت ہم نے

    اب زمانے کا طرف دار لگے ہے وہ بھی

    اب رگ و جاں کو بچاؤں تو بچاؤں کیسے

    سانس چلتی ہے تو تلوار لگے ہے وہ بھی

    کس طرح منزلیں طے ہوں گی بدن کی اے دل

    اس سے ملتا ہوں تو دیوار لگے ہے وہ بھی

    بے مغیلاں سہی تپتے ہوئے صحرا کا سفر

    پاؤں رکھتا ہوں مگر خار لگے ہے وہ بھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے