چل پرے ہٹ مجھے نہ دکھلا منہ

مومن خاں مومن

چل پرے ہٹ مجھے نہ دکھلا منہ

مومن خاں مومن

MORE BYمومن خاں مومن

    چل پرے ہٹ مجھے نہ دکھلا منہ

    اے شب ہجر تیرا کالا منہ

    آرزوئے نظارہ تھی تو نے

    اتنی ہی بات پر چھپایا منہ

    دشمنوں سے بگڑ گئی تو بھی

    دیکھتے ہی مجھے بنایا منہ

    بات پوری بھی منہ سے نکلی نہیں

    آپ نے گالیوں پہ کھولا منہ

    ہو گیا راز عشق بے پردہ

    اس نے پردے سے جو نکالا منہ

    شب غم کا بیان کیا کیجئے

    ہے بڑی بات اور چھوٹا منہ

    جب کہا یار سے دکھا صورت

    ہنس کے بولا کہ دیکھو اپنا منہ

    کس کو خون جگر پلائے گا

    ساغر مے کو کیوں لگایا منہ

    پھر گئی آنکھ مثل قبلہ نما

    جس طرف اس صنم نے پھیرا منہ

    گھر میں بیٹھے تھے کچھ اداس سے وہ

    بولے بس دیکھتے ہی میرا منہ

    ہم بھی غمگین سے ہیں آج کہیں

    صبح اٹھے تھے دیکھ تیرا منہ

    سنگ اسود نہیں ہے چشم بتاں

    بوسہ مومنؔ طلب کرے کیا منہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY