aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

چلتے چلتے سال کتنے ہو گئے

اظہر عنایتی

چلتے چلتے سال کتنے ہو گئے

اظہر عنایتی

MORE BYاظہر عنایتی

    چلتے چلتے سال کتنے ہو گئے

    پیڑ بھی رستے کے بوڑھے ہو گئے

    انگلیاں مضبوط ہاتھوں سے چھٹیں

    بھیڑ میں بچے اکیلے ہو گئے

    حادثہ کل آئنہ پر کیا ہوا

    ریزہ ریزہ عکس میرے ہو گئے

    ڈھونڈیئے تو دھوپ میں ملتے نہیں

    مجرموں کی طرح سائے ہو گئے

    میری خاموشی پہ تھے جو طعنہ زن

    شور میں اپنے ہی بہرے ہو گئے

    چاند کو میں چھو نہیں پایا مگر

    خواب سب میرے سنہرے ہو گئے

    میری گم نامی سے اظہرؔ جب ملے

    شہرتوں کے ہاتھ میلے ہو گئے

    مأخذ:

    azahar inaayatii and ghazal (Pg. 123)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے