چند لمحوں میں غبار کارواں رہ جائے گا

کوثر صدیقی

چند لمحوں میں غبار کارواں رہ جائے گا

کوثر صدیقی

MORE BYکوثر صدیقی

    چند لمحوں میں غبار کارواں رہ جائے گا

    خاک ہو جاؤں گا میں جل کر دھواں رہ جائے گا

    شمع محفل رقص بسمل کا نہ ہوگا کچھ وجود

    انجمن میں گریۂ نوحہ گراں رہ جائے گا

    کر کے ہجرت دور صحرا میں چلے جائیں گے لوگ

    شہر میں جلتے مکانوں کا دھواں رہ جائے گا

    ڈھانپ دے گا اپنی چادر سے مجھے گرد و غبار

    میرے نقش پا کا دھندلا سا نشاں رہ جائے گا

    منبر و محراب ہو جائیں گے سونے ایک روز

    گنبد و مینار پر شور اذاں رہ جائے گا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY