چراغ دینے لگے گا دھواں نہ چھو لینا

عرفان صدیقی

چراغ دینے لگے گا دھواں نہ چھو لینا

عرفان صدیقی

MORE BYعرفان صدیقی

    چراغ دینے لگے گا دھواں نہ چھو لینا

    تو میرا جسم کہیں میری جاں نہ چھو لینا

    زمیں چھٹی تو بھٹک جاؤ گے خلاؤں میں

    تم اڑتے اڑتے کہیں آسماں نہ چھو لینا

    نہیں تو برف سا پانی تمہیں جلا دے گا

    گلاس لیتے ہوئے انگلیاں نہ چھو لینا

    ہمارے لہجے کی شائستگی کے دھوکے میں

    ہماری باتوں کی گہرائیاں نہ چھو لینا

    اڑے تو پھر نہ ملیں گے رفاقتوں کے پرند

    شکایتوں سے بھری ٹہنیاں نہ چھو لینا

    مروتوں کو محبت نہ جاننا عرفانؔ

    تم اپنے سینے سے نوک سناں نہ چھو لینا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    چراغ دینے لگے گا دھواں نہ چھو لینا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے