Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

چراغوں میں اندھیرا ہے اندھیرے میں اجالے ہیں

بدر واسطی

چراغوں میں اندھیرا ہے اندھیرے میں اجالے ہیں

بدر واسطی

MORE BYبدر واسطی

    چراغوں میں اندھیرا ہے اندھیرے میں اجالے ہیں

    ہمارے شہر میں کالی ہوا نے پر نکالے ہیں

    ہمیں شب کاٹنے کا فن وراثت میں ملا ہم نے

    کبھی پتھر پکائے ہیں کبھی سپنے ابالے ہیں

    دلوں میں خوف ہے اس کا نظر ہے اس کی رحمت پر

    گناہ گاروں میں شامل ہیں مگر اللہ والے ہیں

    لڑے تھے ساتھ مل کر ہم چراغوں کے لئے لیکن

    ہمارے گھر اندھیرے ہیں تمہارے گھر اجالے ہیں

    تمہاری یاد سے اچھا نہیں ہوتا کوئی عالم

    میسر جن کو ہو جائے بڑی تقدیر والے ہیں

    محبت آخری حل ہے ہمارے سب مسائل کا

    مگر ہم نے تو نفرت کے سپنولے دل میں پالے ہیں

    بھڑکتی آگ تو دو چار دن میں بجھ گئی تھی بدرؔ

    ابھی تک شہر کے منظر نہ جانے کیوں دھوانلے ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : TO MAIN KAHAN HOON (POETRY) (Pg. 25)
    • Author : Badr Wasti
    • مطبع : Madhya Pradesh Urdu Academy (2010)
    • اشاعت : 2010
    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے