چھوڑ کر ان کو ہمارا آسرا کوئی نہیں

سید غافر رضوی فلک چھولسی

چھوڑ کر ان کو ہمارا آسرا کوئی نہیں

سید غافر رضوی فلک چھولسی

MORE BYسید غافر رضوی فلک چھولسی

    چھوڑ کر ان کو ہمارا آسرا کوئی نہیں

    ماسوا ان کے سہارا دوسرا کوئی نہیں

    منبع اسرار عشق کبریا کوئی نہیں

    ان سے بڑھ کر آئنہ در آئنہ کوئی نہیں

    در پہ پہرہ ہے لگی ہیں قینچیاں دیوار پر

    ہو بھلا دیدار کیسے راستہ کوئی نہیں

    جھانک کر کھڑکی سے خود پردہ گرا دیتے ہیں وہ

    جب کہ اس منظر سے منظر خوش نما کوئی نہیں

    ماہ رخ کی زلف سے ایسے بنا پر نور چاند

    عشق کی دنیا میں اس جیسی ضیا کوئی نہیں

    گم ہوا رہتا ہوں ان کی یاد میں ہر آن میں

    اس سے بڑھ کر اور احساس وفا کوئی نہیں

    میری خواہش ہے سدا پھولو پھلو جان بہار

    دل کی دھڑکن سے بھی آگے کی دعا کوئی نہیں

    دیکھیے مغرب سے نکلا ہے ہمارا آفتاب

    ہم کو حیرت یہ ہوئی حیرت زدہ کوئی نہیں

    میری میت قبر تک دشمن کے کاندھے پر گئی

    کائنات عشق سے آیا گیا کوئی نہیں

    قبر کی آغوش میں جا کر فلکؔ ظاہر ہوا

    مونس و ہمدم عمل کے ماسوا کوئی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY