چھوٹے چھوٹے سے مفادات لیے پھرتے ہیں

اعتبار ساجد

چھوٹے چھوٹے سے مفادات لیے پھرتے ہیں

اعتبار ساجد

MORE BYاعتبار ساجد

    چھوٹے چھوٹے سے مفادات لیے پھرتے ہیں

    در بدر خود کو جو دن رات لیے پھرتے ہیں

    اپنی مجروح اناؤں کو دلاسے دے کر

    ہاتھ میں کاسۂ خیرات لیے پھرتے ہیں

    شہر میں ہم نے سنا ہے کہ ترے شعلہ نوا

    کچھ سلگتے ہوئے نغمات لیے پھرتے ہیں

    مختلف اپنی کہانی ہے زمانے بھر سے

    منفرد ہم غم حالات لیے پھرتے ہیں

    ایک ہم ہیں کہ غم دہر سے فرصت ہی نہیں

    ایک وہ ہیں کہ غم ذات لیے پھرتے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY