چھپ جاتا ہے پھر سورج جس وقت نکلتا ہے

امیر امام

چھپ جاتا ہے پھر سورج جس وقت نکلتا ہے

امیر امام

MORE BYامیر امام

    چھپ جاتا ہے پھر سورج جس وقت نکلتا ہے

    کوئی ان آنکھوں میں ساری رات ٹہلتا ہے

    چمپئی صبحیں پیلی دوپہریں سرمئی شامیں

    دن ڈھلنے سے پہلے کتنے رنگ بدلتا ہے

    دن میں دھوپیں بن کر جانے کون سلگتا تھا

    رات میں شبنم بن کر جانے کون پگھلتا ہے

    خاموشی کے ناخن سے چھل جایا کرتے ہیں

    کوئی پھر ان زخموں پر آوازیں ملتا ہے

    رات اگلتا رہتا ہے وہ ایک بڑا سایہ

    چھوٹے چھوٹے سائے جو ہر شام نگلتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY