داغ سینے پہ جو ہمارے ہیں

محمد دین تاثیر

داغ سینے پہ جو ہمارے ہیں

محمد دین تاثیر

MORE BYمحمد دین تاثیر

    داغ سینے پہ جو ہمارے ہیں

    گل کھلائے ہوئے تمہارے ہیں

    ربط ہے حسن و عشق میں باہم

    ایک دریا کے دو کنارے ہیں

    کوئی جدت نہیں حسینوں میں

    سب نے نقشے ترے اتارے ہیں

    تیری باتیں ہیں کس قدر شیریں

    تیرے لب کیسے پیارے پیارے ہیں

    جس طرح ہم نے راتیں کاٹی ہیں

    اس طرح ہم نے دن گزارے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY