دامن میں آنسوؤں کا ذخیرہ نہ کر ابھی

ساقی فاروقی

دامن میں آنسوؤں کا ذخیرہ نہ کر ابھی

ساقی فاروقی

MORE BY ساقی فاروقی

    دامن میں آنسوؤں کا ذخیرہ نہ کر ابھی

    یہ صبر کا مقام ہے گریہ نہ کر ابھی

    جس کی سخاوتوں کی زمانے میں دھوم ہے

    وہ ہاتھ سو گیا ہے تقاضا نہ کر ابھی

    نظریں جلا کے دیکھ مناظر کی آگ میں

    اسرار کائنات سے پردا نہ کر ابھی

    یہ خامشی کا زہر نسوں میں اتر نہ جائے

    آواز کی شکست گوارا نہ کر ابھی

    دنیا پہ اپنے علم کی پرچھائیاں نہ ڈال

    اے روشنی فروش اندھیرا نہ کر ابھی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دامن میں آنسوؤں کا ذخیرہ نہ کر ابھی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites